132

پاک فوج کے فارمز ڈائریکٹوریٹ کا مونال ریسٹورنٹ کے ساتھ لیز معاہدہ غیر قانونی قرار، تحریری فیصلہ جاری کر دیا

ویب ڈیسک


پاک فوج کے فارمز ڈائریکٹوریٹ کا مونال ریسٹورنٹ کے ساتھ لیز معاہدہ غیر قانونی قرار دیدیا۔
اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔

عدالت نے کہا کہ ریاست اورحکومتی عہدیداران کا فرض ہےکہ وہ مارگلہ ہلز کا تحفظ کرے۔ ریاست کی ذمہ داری ہے عوام کے بنیادی حقوق کیخلاف ورزی کرنےوالوں کےخلاف کارروائی کرے۔
عدالت کا کہنا تھا کہ ریاست کا فرض ہے کہ وہ مارگلہ ہلز کو پہنچنے والے نقصان کے ازالہ کے لیے اقدامات کرے تاکہ مارگلہ ہلز کو مزید تباہی سے بچایا جا سکے۔
ستم ظریفی مارگلہ ہلز کے محفوظ نوٹیفائیڈ ایریا کی بے حرمتی میں ریاستی ادارے ملوث ہونا ہے۔
عدالت کےطابق پاک بحریہ اور پاک فوج نے قانون اپنے ہاتھ میں لے کر نافذ شدہ قوانین کی خلاف ورزی کی۔
یہ قانون کی حکمرانی کو کمزور کرنے اور اشرافیہ کی گرفت کا ایک مثالی کیس تھا، عدالت
انسان کی لاپرواہی پہلے ہی اس کی اپنی بقا بھی خطرے میں ڈال چکی۔
فیصلے میں کہا گیا کہ انسانی بقا کیلئے لازم عوام کو بہت نقصان پہنچایا جا چکا۔ قدرتی ماحول تباہ کرنے سے مستفید چند ہوتے ہیں اور متاثر سب عوام۔
فیصلے کے مطابق ماحولیاتی قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے کوئی عام شہری نہیں۔ جن اداروں نےعوام کی خدمت کرنا تھی وہی قوانین کیخلاف ورزی کرتےہیں۔
عدالت نے اس سے قبل 11 جنوری 2022 کو شارٹ آرڈر جاری کیا تھا۔ چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے تعطیلات پر روانگی سےقبل فیصلہ تحریر کرکے دستخط کیے جو آج جاری کیا گیا۔ 105 صفحات پرمشتمل تفصیلی فیصلے میں اسلام آباد انوائرمنٹل کمیشن کی رپورٹ کوبھی حصہ بنایا گیا۔

کیٹاگری میں : فوج

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں