86

ضلع اپر چترال میں تین دوست تالاب میں نہاتے ہوئے جان بحق


ریسکیو کے عملہ نے تینوں کی لاشیں تالاب سے برآمد کرلی

گل حماد فاروقی


تفصیلات کے مطابق ضلع اپر چترال کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر  بونی اوی لشٹ شوتار میں دریا کے ساتھ جھیل میں تین دوستوں کی ڈیڈ باڈی کی اطلاع ریسکیو1122 کو ملنے پر ان کی  ٹیم نے سرچ اپریشن کرکے تینوں ڈیڈ باڈیز کوجھیل سے نکال کر انہیں THQ ہسپتال  بونی منتقل کر دیا۔

 ابتدائی معلومات کے مطابق تینوں دوست سیر و تفریح کی غرض سے دریا کے کنارے جھیل پر گئے تھے، واپس نہ آنے اور  تلاش کرنے پر تینوں دوستوں کے کپڑے جھیل کے کنارے دکھائی دئیے، ریسکیو1122 کو اطلاع ملنے پر ان کی ٹیم نے تینوں ڈیڈ باڈیز کو جھیل سے نکال کر پوسٹ مارٹم کے لئے THQ ہسپتال بونی اپر چترال منتقل کردیا، تینوں دوستوں کی عمریں 13، 14 ،15 سال کے قریب بتائی جا رہی ہیں`

ریسکیو1122 کے مطابق مرنے والوں کے نام یہ ہیں ۔ مرتضی ولد خوش  عمر قریب 14/ 15 سال، محبوب ولد بشارت عمر قریب 13/14 سال اور فیاض ولد موسار عمر قریب 12/ 13 سال

واضح رہے کہ چترال کے لوگ مرغابیوں کی شکار کے لیے اکثر دریا کے کنارے تالاب بناتے ہیں۔ ان تالابوں میں پلاسٹک سے بنے ہوے مرغابیوں کی ہم شکل کھلونے نما پرندے چھوڑتے ہیں۔

 روس کے ساحلی علاقے سائبیریا اور دیگر یخ بستہ علاقوں سے آنے والے مہمان مرغابیاں انہیں دیکھ کر ان تالابوں میں اترتے ہیں جن پر پردے میں چھپے ہوئے شکاری حضرات اندھا دھن فائرنگ کرتے ہوئے ان کا شکار کرتے ہیں۔ مگر اس شکار کے دوران یا ان تالابوں میں کبھی کبھار یہ شکاری خود یا دیگر لوگ بھی شکار ہوتے ہیں جس کا واضح ثبوت یہ واقعہ ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں