فلک نور کیس کے حوالے سے سماجی کارکنان کا چیرمین نیشنل کمیشن ان ویمن اسٹیٹس نیلوفر بخیار سے ملاقات


گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے 12 سالہ مغوی لڑکی فلک نور کی بازیابی اور اغواء کاروں کو کڑی سےکڑی سزا دلوانے کے لئے گلگت بلتستان کے سماجی کارکنان متحرک ہیں۔

اس سلسلے میں آج GB اور چترال کے سماجی کارکنان کے ایک وفد نے نیشنل کمیشن آن ویمن اسٹیٹس کے چیرپرسن  نیلوفر بختیار سے  ان کے دفتر میں ملاقات کی اس موقع پر فلک نور کے اغواء اور انارہ قتل کے کیسسز کے حوالے سے گفتگو کی گئی۔

انہوں نے نیلوفر بختیار سے  مطالبہ کیا کہ وہ GB کے چیف سکریٹری کو فورا خط لکھیں کہ وہ فلک نور کو فی الفور  اغواکاروں کی چنگل سے نکال کر  ایک محفوظ گھر میں منتقل کریں جہاں اس کو ان کے ماں باپ اور ان کے وکلا سے بلا روک ٹوک ملاقات کی سہولت میسر ہو۔

دوسرا  چیف سکریٹری فوری طور پر ایک میڈیکل بورڈ قائم کرکے فلک نور کا جسمانی، نفسیاتی صحت اور ان پر کی گئی جنسی تشدد کے حوالے سے ڈاکٹروں کے بورڈ سے رائے حاصل کی جائے۔

 اور آخر میں چیف سکریٹری فوری طور پر SP گلگت اور ایڈیشنل SHO دنیور کو معطل کرنے کا مطالبہ کیا گیا  اور ان کے خلاف اغوا کاروں کی پشت پناہی، قوانین کی خلاف ورزی اور اپنے فرایض منصبی میں غفلت برتنے پر ان کے خلاف FIR درج کروا کر تحقیقات کروائی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں